Ajab Rang Par Hai Bahare Madina

0
160
Syed Owais Raza Qadri Naats

Listen and download beautiful naat Ajab rang par hai bahar e Madina Sarkar Ka Madina by Owais Qadri with lyrics in Urdu and Roman. Loving Madina is due to loving prophet Muhammad Mustafa (peace be upon him) and this naat is all about beloved Madina Munawwara.

Ajab Rang Par Hai Bahare Madina Mp3 Download

Download Here
(Right Click and Choose Save Link As)

 

[adsense_inserter id=”3100″]

 

Ajab Rang Par Hai Bahare Madina
Ke Sab Jannatein Hain Nisar e Madina
Sarkar Ka Madina Sarkar Ka Madina
Sarkar Ka Madina Sarkar Ka Madina

Khula Hay Sabhi Kay Liye Baab-e-Rahmat
Wahan Koi Rutbey Men Adnaa Na Aali
Muraadon Se Daman Nahi Koi Khalee
Qitarein Lagaaye Kharay Hen Sawaali

Men Pehle Pehel Jab Madinay Gaya Tha
To Thi Dil Ki Halat Tarap Jaane Wali
Wo Darbaar Sach Much, Mere Samne Tha
Abhi Tak Tasavvurr Tha Jiska Khayali

Men Ek Haath Se Dil Sumbhaley Hue Tha
To Thi Dosre Haath Me Thi Unki Jaali
Duaon Ke Liye Haath Uthtay To Kese
Na Yeh Hath Khaali Na Wo Hath Khaali

Madina Madina Humaara Madina
Humain Jaan O Dil Se He Pyaara Madina
Suhaana Suhaana Dilara Madina
Har Aashiq Ki Aankhon Ka Taara Madina

Paharon Pe Bhi Husan, Kante Bhi Dilkush
Hen Qudrat Ne Kese Sanwaara Madina
Khuda Gar Qayamat Main Farmaye Ke Maango
Lagayenge Deewaane Naara-e-Madina

Ragey Gul Ki Jab Naazuki Dekhta Houn
Mujhay Yaad Aatey Hen Khaar E Madina
Mubarak Rahe Andalibo Tumhe Gull
Hame Gull Say Behtar Hen Khaar-e-Madina

Rahay Unke Jalway Basey Unke Jalway
Mera Dil Banay Yadgaar-e-Madina
Murad-e-Dil Bul Bule Be Nawade
Khudaya Dikha De Bahaar-e-Madina

عجب رنگ پر ہے بہارِ مدینہ
کہ سب جاتیں ہے نثارِ مدینہ

سرکار کا مدینہ، سرکار کا مدینہ
سرکار کا مدینہ، سرکار کا مدینہ

کھلا ہے سبھی کے لیۓ باب رحمت
وہاں کوئ رتبے میں ادنی نہ اعلی
مرادوں سے دامن نہیں کوئ خالی
‎قطاریں لگایں کھڑیں ہیں سوالی

میں پہلے پہل جب مدینے گیا تھا
تو تھی دل کی حالت تڑپ جانے والی
وہ دربار سچ مچ میرے سامنے تھا
ابھی تک تصور تھا جس کا خیالی
میں مبک ہاتھ سے دل سنبھالے ہوۓ تھا
تو تھی دوسرے ہاتھ میں تھی ان کی جالی
دعاؤؤں کے لیۓ ہاتھ اٹھاتے تو کیسے
نہ یہ ہاتھ خالی، نہ وہ ہاتھ خالی

مدینہ مدینہ ہمارا مدینہ
ہمیں جان و دل سے ہے پیارا مدینہ
سہانہ سہانہ دلارا مدینہ
ہر عاشق کی آنکھوں کا تارا مدینہ

پہاڑوں پہ بھی حسن، کانٹے بھی دلکش
ہے قدرت نے کیسے سنوارا مدینہ
خدا گر قیامت میں فرما‎ۓ کہ مانگو
لگايں گے دیوانے نعرء مدینہ

رگ گل کی جب نازکی دیکھتا ہوں
مجھے یاد آتے ہیں خار مدینہ

مبارک رہے عندلیبو تمھیں گل
ہمیں گل سے بہتر ہے خارِ مدینہ

رہیں ان کے جلوے بسیں ان کے جلوے
مرا دل بنے یادگارِ مدینہ
مراد دل بلبلے بے نوادے
خدایا دکھا دے بہار مدینہ

 

[adsense_inserter id=”3414″]

 

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

:bye: 
:good: 
:negative: 
:scratch: 
:wacko: 
:yahoo: 
B-) 
:heart: 
:rose: 
:-) 
:whistle: 
:yes: 
:cry: 
:mail: 
:-( 
:unsure: 
;-)