Bheed Mein Ek Ajnabi Ka Saamna Lyrics Poetry

0
67
amjad islam amjad

Bheed Mein Ik Ajnabi Ka Saamna Acha Laga Lyrics

 

 

bheed mein ek ajnabi ka saamna acha laga
sab se chup kar wo kisi ka dekhna achcha laga

surmai aankho ke neeche phool se khilne lage
kahte kahte kuch kisi ka sochna achcha laga

baat to kuch bhi nahi thi lekin us ka ek dam
hath ko honto pe rakh kar rokna achcha laga

chai me cheeni milana us ghari bhaaya buhat
zere lab wo muskurata shukriya achchha laga

dil mei kitne ahad baandhe the bhulaane ke use
wo mila to sab iraade torana achcha laga

beiraada lams ki wo sansani pyari lagi
kam tawajjo aankh ka wo dekhna achcha laga

neem shab ki Khaamoshi me bheegti sarko pe kal
teri yaado ke jaalo me ghoomna achcha laga

us uduu-e-jaan ko ‘Amjad’ mai bura kaise kahu
jab bhi aaya saamne wo bewafa achcha laga

 

Bheed Mein Ik Ajnabi Ka Saamna Poetry in Urdu Amjad Islam Amjad

بھیز میں اک اجنبی کا سامنا اچھا لگا

سب سے چھپ کر وہ کسی کا دیکھنا اچھا لگا

سرمئ آنکھوں کے نیچے پھول سے کھلنے لگے

کہتے کہتے کچھ کسی کا سوچنا اچھا لگا

بات تو کچھ بھی نہیں تھی لیکن اس کا اک دم

ہاتھ کو ہونٹوں پہ رکھ کر روکنا اچھا لگا

چاۓ میں چینی ملانا اس گھزی بھایا بہت

زیر لب وہ مسکراتا شکر؛ہ اچھا لگا

دل میں کتنے عہد باندھے تھے بھلانے کے اسے

وہ ملا تو سب ارادے توڑنا اـھا لگا

بے ارادہ لمس کی وہ سنسنی پیاری لگی

کم توجہ آنکھ کا وہ دیکھنا اچھا لگا

نیم شب کی خاموشی میں بھیگتی سڑکوں پہ کل

تیری یادوں کے جالوں میں گھومنا اچھا لگا

اس عدو جان کو امجد میں برا کیسے کہوں

جب بھی آیا سامنے وہ بے وفا اچھا لگا

 

 

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

:bye: 
:good: 
:negative: 
:scratch: 
:wacko: 
:yahoo: 
B-) 
:heart: 
:rose: 
:-) 
:whistle: 
:yes: 
:cry: 
:mail: 
:-( 
:unsure: 
;-)