Karo Jo Baat Karni Hai

0
272
amjad islam amjad

Karro Jo Baat Karni He
Agar Is Aas Per Baithey Key Duniyaa
Bus Tumhein Sun’nay Ki Khaatir
Gosh Ber Awaaz Ho Key Beith Jaai Gii
To Aisaa Ho Nahii Saktaa
Zamaana Aik Logoo Sey Bharaa Foot Path He Jis Per
Kisi Ko Aik Lamhey Key Liyey Ruknaa Nahii Miltaa
Bithaao Laakh Tum Pehrey
Tamaasha Gaah-E-Aalam Sey Guzartii Jai Gi Khalqet
Binaa Deikhey Binaa Tehrey
Karo Jo Baat Karnii He

Amjad Islam Amjad

کرو، جو بات کرنی ہے
اگر اس آس پہ بیٹھے، کہ دنیا
بس تمہیں سننے کی خاطر
گوش بر آواز ہو کر بیٹھ جائے گی
تو ایسا ہو نہیں سکتا
زمانہ، ایک لوگوں سے بھرا فٹ پاتھ ہے جس پر
کسی کو ایک لمحے کے لئے رُکنا نہیں ملتا
بٹھاؤ لاکھ تُم پہرے
تماشا گاہِ عالم سے گزرتی جائے گی خلقت
بِنا دیکھے، بِنا ٹھہرے
جِسے تُم وقت کہتے ہو
دھندلکا سا کوئی جیسے زمیں سے آسماں تک ہے
یہ کوئی خواب ہے جیسے
نہیں معلوم کچھ اس خواب کی مہلت کہاں تک ہے
کرو، جو بات کرنی ہے

امجد اسلام امجد

 

 
[adsense_inserter id=”3100″]  

 

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

:bye: 
:good: 
:negative: 
:scratch: 
:wacko: 
:yahoo: 
B-) 
:heart: 
:rose: 
:-) 
:whistle: 
:yes: 
:cry: 
:mail: 
:-( 
:unsure: 
;-)