Main Gaya Tha Us Gali Mein

0
45
amjad islam amjad

Main gaya tha us gali mein…
Mai gya tha us gali me kai khuwahishen pehn kar
Wo jo thi boht shanasa
Unhi khirkio se ab ke
Kisi rukh ki roshni se na chragh koi larza
Na koi sitara chamka, na hi phool koi aia
Dil muntazir ki janib
Na uthai koi chilman kisi dast-e-pur hina ne
Na saba ki dastako se koi parwa sarsaraia
Kisi khuwab se ulajh kar na to choria hi chanki
Kisi aankh me simat kar na hi chand muskaraia
Mai gia tha us gali me kai khuwahishai pehn kar

 

 

Main Gaya Tha Us Gali Main in Urdu Written By Amjad Islam Amjad

میں گیا تھا اس گلی میں۔۔۔۔۔۔
میں گیا تھا،اس گلی میں کئ خواہشیں پہن کر
وہ جو تھیں بہت شناسا
انہی کھڑکیوں سے اب کے
کسی رخ کی روشنی سے نہ چراع کوئ لرزا
نہ کوئ ستارا چمکا، نہ ہی پھول کوئ آیا
دل منتظر کی جانب
نہ اٹھائ کوئ چلمن کسی دست پر حنا نے
نہ صبا کی دستکوں سے کوئ پروا سرسرایا
کسی خواب سے الجھ کر نہ تو چوڑیاں ہی چھنکیں
کسی آنکھ میں سمٹ کر نہ ہی چاند مسکرایا
میں گیا تھا،اس گلی میں کئ خواہشیں پہن کر

 

 

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

:bye: 
:good: 
:negative: 
:scratch: 
:wacko: 
:yahoo: 
B-) 
:heart: 
:rose: 
:-) 
:whistle: 
:yes: 
:cry: 
:mail: 
:-( 
:unsure: 
;-)