Sundar Komal Sapnon Ki Barat Guzar Gai Jana

0
57
parveen shakir poetry

Sundar Komal Sapnon Ki Barat Guzar Gai Jana Parveen Shakir

 

 

SUNDAR, KOMAL SAPNON KI BARAAT GUZAR GAYI JAANA,
DHOOP ANKHON TAK AA POHANCHI HAI, RAAT GUZAR GAYI JANA,
BHANWAR SAMAY TAK JIS NE HUMAIN BAAHAM ULJHAAYE RAKHA,
WOH ALBELI RESHAM AESI BAAT GUZAR GAYI JAANA,
SADAA KI DEKHI RAAT HUMAIN IS BAAR MILI TO CHUPKAY SE,
KHAALI HATH PE RAKH KE KYA SOGHAAT GUZAR GAYI JAANA,
KIS KOMPAL KI AAS MEIN AB TAK WESE HI SARSABZ HO TUM,
AB TO DHOOP KA MAUSAM HAI, BARSAAT GUZAR GAYI JAANA..

 

Ghazal In Urdu

سُندَر کومل سپنوں کی بارات گزر گئی جاناں
دھوپ آنکھوں تک آ پہنچی ہے رات گزر گئی جاناں

بہت سمے تک جسنے ہمیں باہم الجھائے رکھا
وہ البیلی ریشم جیسی بات گزر گئی جاناں

سدا کی دیکھی رات ہمیں اس بار ملی تو چپکے سے
خالی ہاتھ پہ رکھ کے کیا سوغات گزر گئی جاناں

کس کونپل کی آس میں اب تک ویسے ہی سرسبز ہو تم
اب تو دھوپ کا موسم ہے برسات گزر گئی جاناں

لوگ نہ جانے کن راتوں کی مرادیں مانگا کرتے ہیں
اپنی رات تو وہ جو تیرے ساتھ گزر گئی جاناں

 

 

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

:bye: 
:good: 
:negative: 
:scratch: 
:wacko: 
:yahoo: 
B-) 
:heart: 
:rose: 
:-) 
:whistle: 
:yes: 
:cry: 
:mail: 
:-( 
:unsure: 
;-)