Udaas Raaton Mein Taiz Coffee Ki Talkhion Mein

0
83
wasi shah poetry

Udaas Raaton Mein Taiz Coffee Ki Talkhion Mein
Wo Kuch Ziada Hi Yaad Aata Hy Sardion Mein

Mjhe Ijazat Nahi Hai Us Ko Pukaarney Ki
Jo Goonjta Hy Lahoo Mei, Seeney Ki Dharkano Mei

Wo Bachpana Jo Udas Raahon Mein Kho Gaya Thaa
Mai Dhoondta Hoon Usay Tumhari Shararaton Mein

Usay Dilasay To De Raha Hoon Magar Ye Such Hai
Kahin Koi Khouf Barrh Raha Hai Tasalyion Mein

Tum Apni Pouron Se Jaaney Kia Likh Gaye They Jana
Charaagh Roshan Hain Ab Bhi Meri Hatheliyon Mei

Jo Tu Nhi Hy To Ye Mukammal Na Ho Saken Gi
Teri Yeh Ehmiyat Hy Meri Kahaniyon Mein

Mujhay Yaqeen Hai Woh Thaam Lega Bharam Rakhe Ga
Yeh Maan Hai To Diye Jalaye Hain Aandhion Mein

Har Ek Mousam Roshni Si Bikhairty Hain
Tumhary Gham Ke Charaagh Meri Udaasiyon Mei!!

Syed Wasi Shah

 

 

Udaas Raaton Ghazal in Urdu:

Udaas Raaton Mein by Wasi Shah

Udas Raaton Mein by Wasi Shah in Urdu Written:

اداس راتوں میں تیز کافی کی تلخیوں میں
وہ کچھ زیادہ ہی یاد آتا ہے سردیوں میں

مجھے اجازت نہیں ہے اس کو پکارنے کی
جو گونجتا ہے لہو میں سینے کی دھڑکنوں میں

وہ بچپنا جو اداس راہوں میں کھو گیا تھا
میں ڈھونڈتا ہوں اسے تمہاری شرارتوں میں

اسے دلاسے تو دے رہا ہوں مگر یہ سچ ہے
کہیں کوئی خوف بڑھ رہا ہے تسلیوں میں

تم اپنی پوروں سے جانے کیا لکھ گئے تھے جاناں
چراغ روشن ہیں اب بھی میری ہتھیلیوں میں

جو تو نہیں ہے تو یہ مکمل نہ ہو سکیں گی
تری یہی اہمیت ہے میری کہانیوں میں

مجھے یقیں ہے وہ تھام لے گا بھرم رکھے گا
یہ مان ہے تو دیے جلائے ہیں آندھیوں میں

ہر ایک موسم میں روشنی سی بکھیرتے ہیں
تمہارے غم کے چراغ میری اداسیوں میں

وصی شاہ

More Urdu Ghazals

More Wasi Shah Poetry

 

 

 

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

:bye: 
:good: 
:negative: 
:scratch: 
:wacko: 
:yahoo: 
B-) 
:heart: 
:rose: 
:-) 
:whistle: 
:yes: 
:cry: 
:mail: 
:-( 
:unsure: 
;-)