Dil by Allama Iqbal

0
164
Allama Iqbal Poems

 

[adsense_inserter id=”5423″]

 

Qissa-e-Dar-o-Rasan Bazi-e-Tiflana-ey-Dil
Eltejaey ‘Arini’ Surkhiey Afsana Dil

Ya Rub Iss Sagheer-e-Labrez Kee Mey Kiya Ho Gi
Jadah-e-Mulk-e-Baqa Hey Khat-e-Pemaney Dil

Abar-e-Rahmat Tha Key Thee Ishq Kee Bijli ya Rub!
Jul Gayi Mazraa-e-Hasti To Uga Dana-e-Dil
Husan Ka Janj-e-Giran Maaya Tujhy Mil Jata
Tune Farhad Na Khoda Kabhee Veera-e-Dil
Arsh Ka Hey Kabhee Kaabey Ka Hey Dhoka Iss Per
Kis Ki Manzil Hey Elaahi. Maira Kashana-e-Dil

Iss Ka Apna Hey Junoon Or Mojhey Souda Apna
Dil Kisi Or Ka Dewaana, Main Dewana-e-Dil
Tu Samajta Naheen Aey Zahid-e-Nadaan Iss ko
Rashk-e-Sad Sajda Hey Aik Laghzish-e-Mastana-e-Dil
Khaak Kay Dhair Ko ekseer Bana Daiti Hey
Voh Aser Rakhti Hey Khakster-e-Pervana-e-Dil
eshq Ke Daam Main Phans Ker Ye Riha Hota Hey
Barq Girti Hey To Ye Nakhal Hara Hota Hey

قصہ دار و رسن بازی طفلانۂ دل
التجاۓ ارنی ، سرخی افسانۂ دل
یا رب اس ساغر لبریز کی مے کیا ہو گی
جادۂ ملک بقا ہے خط پیمانۂ دل
ابر رحمت تھا کہ تھی عشق کی بجلی یارب!
جل گئ مزرع ہستی تو اگا دانۂ دل
حسن کا گنج گراں مایہ تجھے مل جاتا
تونے فرہاد، نہ کھودا کبھی ویرانۂ دل
عرش کا ہے کبھی کعبے کا ہے دھوکا اس پر
کس کی منزل ہے الہی، مرا کاشانۂ دل
اس کو اپنا ہے جنوں اور مجھے سودا اپنا
دل کسی اور کا دیوانہ، میں دیوانۂ دل
تو سمجھتا نہیں اے زاہد ناداں اس کو
رشک صد سجدہ ہے اک لغزش مستانۂ دل
خاک کے ڈھیر کو اکسیر بنا دیتی ہے
وہ اثر رکھتی ہے خاکستر پروانۂ دل
عشق کے دام میں پھنس کر یہ رہا ہوتا ہے
برق گرتی ہے تو یہ نخل ہرا ہوتا ہے

 

[adsense_inserter id=”3414″]

 

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

:bye: 
:good: 
:negative: 
:scratch: 
:wacko: 
:yahoo: 
B-) 
:heart: 
:rose: 
:-) 
:whistle: 
:yes: 
:cry: 
:mail: 
:-( 
:unsure: 
;-)