Shama o Parwana by Allama Iqbal

1
146
Allama Iqbal Poems

 

[adsense_inserter id=”5423″]

 

Perwana Tujh Say Kerta Hey Aey Shama! Piyar Kyun
Ye Jaan-e-Bay-Karar Hey Tujh Per Nisar Kyun

Seemabwar Rakhti Hey Tairi Ada isey
Adub-e-Ishq Tune Sikhaye Hen Kiya isey
Kerta Hey Ye Tawaf-e-Tairi Jalvagah Ka
Phoonka Hova Hey Kiya Tairi Barq-e-Negah Ka

Azaar-e-Mout Main isey Aram-e-Jan Hey Kiya
Sholay Main Taire Zindagi-e-Jawidan Hey Kiya

Ghumkhana-e-Jahan Main Jo Tairi Zia Na Hu
Iss Tafta Dil Ka Nakhle-e-Tamanna Hara Na Hu

Girna Taire Huzoor Main iski Namaz Hey
Nanhey Say Dil Main Lazzat-e-Souz-o-Gudaz Hey

Kuchh Iss Main Josh-e-Aashiq-e-Husn-e-kadeem Hey
Chota Sa Toor Tu, Ye Zara Sa Kaleem Hey
Pervana, Or Zouq-e-Tamashaey Roshnee
Keera Zara Sa, Or Tamannaey Roshnee,,,

پروانہ تجھ سے کرتا ہے اے شمع پيار کيوں
يہ جان بے قرار ہے تجھ پر نثار کيوں
سيماب وار رکھتی ہے تيری ادا اسے
آداب عشق تو نے سکھائے ہيں کيا اسے؟
کرتا ہے يہ طواف تری جلوہ گاہ کا
پھونکا ہوا ہے کيا تری برق نگاہ کا؟
آزار موت ميں اسے آرام جاں ہے کيا؟
شعلے ميں تيرے زندگی جاوداں ہے کيا؟
غم خانہ جہاں ميں جو تيری ضيا نہ ہو
اس تفتہ دل کا نخل تمنا ہرا نہ ہو
گرنا ترے حضور ميں اس کی نماز ہے
ننھے سے دل ميں لذت سوز و گداز ہے
کچھ اس ميں جوش عاشق حسن قديم ہے
چھوٹا سا طور تو يہ ذرا سا کليم ہے

پروانہ ، اور ذوق تماشائے روشنی
کيڑا ذرا سا ، اور تمنائے روشنی

 

[adsense_inserter id=”3414″]

 

1 COMMENT

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

:bye: 
:good: 
:negative: 
:scratch: 
:wacko: 
:yahoo: 
B-) 
:heart: 
:rose: 
:-) 
:whistle: 
:yes: 
:cry: 
:mail: 
:-( 
:unsure: 
;-)