HAATH UTHAAIE HUM BHI..

0
50

aaiye haath uthaaie ham bhi
ham jenhei rasam-e-dua yaad nahi
ham jenhei soz-e-mohabbat k siwa
koi but, koi khudaa yaad nahi
aaiye araz guzarei ki nigaar-e-hasti
zahar-e-imroz mei sheerini-e-fardaa bhar de
wo jenhei taabe garanbaari-e-ayyaam nahi
unki palakon pe shab-o-roz ko halkaa kar de
jin ki aankho ko rukh-e-subha ka yaara bhi nahi
un ki raato mei koi shamaa munawwar kar de
jin k qadmo ko kisi raah ka sahaara bhi nahi
un ki nazaro pe koi raah ujaagar kar de
jin ka din peravi-e-kazbo-riyaa hai un ko
himmat-e-kufur milei, jurrat-e-tehqiq milei
jin k sar muntazir-e-tegh-e-jafaa hai un ko
dast-e-qaatil ko jhattak denei ki tofeeq milei
ishq ka sirr-e-nihaa jan-tapaan hai jis se
aj iqraar karei aor tapish mit jaaie
haraf-e-haq dil mei khataktaa hai jo kaante ki taraah
aj izhaar karei or khalish mit jaie

آئیے ہاتھ ’اٹھائیں ہم بھی
ہم جنہیں رسمِ دعا یاد نہیں

ہم جنہیں سوزِ محبت کے سوا
کوئی ’بت کوئی خدا یاد نہیں

آئیے عرض گزاریں کہ نگارِ ہستی
زہرِاِمروز میں شیرنئی فردا بھر دے

وہ جنہیں تابِ گراںباریء اِیّام نہیں
’ان کی پلکوں پہ شب و روز کو ہلکا کر دے

جن کی آنکھوں کو ’رخِ صبح کا یارا بھی نہیں
’ان کی راتوں میں کوئی شمع منّور کر دے

جن کے قدموں کو کسی رہ کا سہارا بھی نہیں
’ان کی نظروں پہ کوئی راہ ’اجاگر کر دے

جن کا دیں پیرویء کِذب و ریا ہے ’ان کو
ہمتِ کفر ملے،’جرّاتِ تحقیق ملے

جِن کے سر ’منتظرِ تیغِ جفا ہیں ’ان کو
دستِ قاتِل کو جھٹک دینے کی توفیق ملے

عشق کا سرِنہاں،جانِ تپاں ہے جس کو
آج اقرار کریں اور تپش مِٹ جائے

حرفِ حق دِل میں کھٹکتا ہے جو کانٹے کی طرح
آج اِظہار کریں اور خلش مِٹ جائے

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

:bye: 
:good: 
:negative: 
:scratch: 
:wacko: 
:yahoo: 
B-) 
:heart: 
:rose: 
:-) 
:whistle: 
:yes: 
:cry: 
:mail: 
:-( 
:unsure: 
;-)