Dekha Hai Zindagi Ko Kuch Itna Kareeb Se

0
228
sahir ludhiyanvi poetry

 

[adsense_inserter id=”3414″]

 

Dekha hai zindagi ko kuchh itna kareeb se
chahre tamam lagne lage hain ajeeb se

is raingati hayaat ka kab tak uthaayein baar
beemar ab ulajhne lage hain tabeeb se

har gaam par hai majamaa-e-ushshaaq muntazir
maktal ki raah milti hai kuu-e-habeeb se

is tarah zindagi ne diya hai hamara sath
jaise koi nibaah raha ho rakeeb se

ai rooh-e-asar jaag, kahan so rahi hai tu
awaaz de rahe hain payamber saleeb se
Sahir Ludhianvi

 

دیکھا ہے‍ذندگی کو کچھ اتنا قریب سے
چہرے تمام لگنے لگے ہیں عجیب سے
اس رینگتی حیات کا کب تک اٹھایں بار
بیماراب الجھنے لگے ہیں طبیب سے
ہر گام پر ہیں مجمعء عشاق منتظر
مقتل کی راہ ملتی ہے کوۓ حبیب سے
اس طرح زندگی نے دیا ہے ہمارا ساتھ
جیسے کوئ نباہ رہا ہورقیب سے
اے روح عصر جاگ، کہاں سو رہی ہے تو
آواز دے رہے ہیں پیامبر صلیب سے
ساحرلدھیانوی

 

[adsense_inserter id=”3100″]

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

:bye: 
:good: 
:negative: 
:scratch: 
:wacko: 
:yahoo: 
B-) 
:heart: 
:rose: 
:-) 
:whistle: 
:yes: 
:cry: 
:mail: 
:-( 
:unsure: 
;-)