Dil Ke Dariya Ko Kisi Roz Utar Jana Hai Poetry

0
162
amjad islam amjad

Dil Ke Darya Ko Kisi Roz by Amjad Islam Amjad

 

 
[adsense_inserter id=”6236″]  

 
Dil Ke Dariya Ko Kisi Roz Utar Jana Hai
Itnaa Be Simt Na Chal Laut Ke Ghar Jana Hai

Us Tak Aati Hai To Har Cheez Theher Jati Hai
Jaise Paana Hi Use Asl Mein Mar Jana Hai

Bol Ay Shaam-e-Safar Rang-e-Rihai Kiya Hai
Dil Ko Rukna Hai Ke Taaron Me Theher Jana Hai

Kaun Ubharte Huwe Mahtab Ka Rasta Roke
Us Ko Har Taur Soo-e-Dasht-e-Sahar Jana Hai

Mai Khila Hoo To Isi Khaak Me Milna Hai Mujhe
Wo To Khushboo Hai Use Agle Nagar Jana Hai

Wo Tere Husn Ka Jadu Ho Ke Mera Gham-e-Dil
Har Musafir Ko Isi Ghaat Utar Jana Hai

[quote]

دل کے دریا کو کسی روز اتر جانا ہے
اتنا بے سمت نہ چل لوٹ کے گھر آنا ہے
اس تک آتی ہے تو ہر چیز ٹہر جاتی ہے
جیسے پانا ہی اسے اصل میں مر جانا ہے
بول اے شام سفر رنگ رہائ کیا ہے
دل کو رکنا ہے کہ تاروں میں ٹہر جانا ہے
کون ابھرپے ہوۓ ماہتاب کا راستہ روکے
اس کو ہر طور سوۓ دشت سحر جانا ہے
میں کھلا ہوں تو اسی خاک میں ملنا ہے مجھے
وہ تو خوشبو ہے اسے اگلے نگر جانا ہے
وہ تیرے حسن کا جادو ہو کہ میرا غم دل
ہر مسافر کو اسی گھاٹ اتر جانا ہے

[/quote]  

 
[adsense_inserter id=”3100″]  

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

:bye: 
:good: 
:negative: 
:scratch: 
:wacko: 
:yahoo: 
B-) 
:heart: 
:rose: 
:-) 
:whistle: 
:yes: 
:cry: 
:mail: 
:-( 
:unsure: 
;-)