AB KE BARAS DASTUR-E-SITAM

0
144

AB KE BARAS DASTUR-E-SITAM ME KIA KIA BAAB IZAAD HUYE,
JO QAATIL THEY MAQTUL HUYE, JO SAID THEY AB SAIYAAD HUYE,
PEHLE BHI KHIZAA ME BAAGH UJARRE PR YU NAHI JESE AB KE BARAS,
SAARE BOOTE PATA PATA RAWISH RAWISH BARBAAD HUYE,
PEHLE BHI TAWAAF-E-SHAM-E-WAFA THI RASAM MOHABBAT WALO KI,
HAM TUM SE PEHLE BHI YAHAA “MANSOOR” HUYE “FARHAAD” HUYE,
IK GUL KE MURJHANE PR KIA KIA GULSHAN ME KOHRAAM MACHA,
IK CHAHRA KUMHLA JAANE SE KITANE DIL NASHAAD HUYE,
FAIZ NA HUM “YUSUF” NA KOI “YAQOOB” JO HAM KO YAAD KARE,
APNI KIA KANAAN ME RAHE YA MISIR ME JAA ABAAD HUYE..
اب کے برس دستورِستم میں کیا کیا باب ایزاد ہوئے
جو قاتل تھے مقتول ہوئے، جو صید تھے اب صیّاد ہوئے

پہلے بھی خزاں میں باغ اجڑے پر یوں نہیں جیسے اب کے برس
سارے بوٹے پتہ پتہ روش روش برباد ہوئے

پہلے بھی طوافِ شمعِ وفا تھی، رسم محبت والوں کی
ہم تم سے پہلے بھی یہاں منصور ہوئے، فرہاد ہوئے

اک گل کے مرجھانے پر کیا گلشن میں کہرام مچا
اک چہرہ کمھلا جانے سے کتنے دل ناشاد ہوئے

فیض، نہ ہم یوسف نہ کوئی یعقوب جو ہم کو یاد کرے×
اپنی کیا، کنعاں میں رہے یا مصر میں‌ جا آباد ہوئے

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

:bye: 
:good: 
:negative: 
:scratch: 
:wacko: 
:yahoo: 
B-) 
:heart: 
:rose: 
:-) 
:whistle: 
:yes: 
:cry: 
:mail: 
:-( 
:unsure: 
;-)